23 Jul 2018     ❗DAILY DARS E QURAN❗ ❗WATCH LIVE❗ 👉(Recitation, Translation & Short Tafseer starting from Surah Ahzaab Ayat 16) 👉Hafiz Syed Muhammad Haider Naqvi Sb. (KARWAN E QURAN) 👉Lectures will be held DAILY from Monday 23rd July 2018 to Monday 30th July 2018 👉At Masjid-e-Yasrab, DHA, Karachi 👉Timings: Soon after Namaz-e-Maqhribain 👉(Ladies & Gents) 👉 Live on KARWAN E QURAN Facebook Page: https://www.facebook.com/karwanequran

|   06 Jul 2018     ❗DAILY DARS E QURAN❗ ❗WATCH LIVE❗ 👉(Recitation, Translation & Short Tafseer starting from Surah Naml Ayat 59) 👉Hafiz Syed Muhammad Haider Naqvi Sb. (KARWAN E QURAN) 👉Lectures will be held DAILY from Friday 6th July 2018 to Thursday 12th July 2018 👉At Masjid-e-Yasrab, DHA, Karachi 👉Timings: Soon after Namaz-e-Maqhribain 👉(Ladies & Gents) 👉 Live on KARWAN E QURAN Facebook Page: https://www.facebook.com/karwanequran

|   02 Jul 2018     کاروان قرآن امتحان میں شرکت کرنے والے برادران و خواہران کو مبارکباد پیش کرتے ہیں۔ آپ سے درخواست ہے کہ انتظار فرمائیں ان شاء الله بہت جلد آپ کو سوالات کے صحیح جواب ارسال کر دیے جائیں گے اور نتائج کا اعلان بھی کر دیا جائے گا۔ اس سلسلہ میں بار بار رابطہ نہ کریں سب سے زیادہ نمبر لینے والے تین افراد کو زیارت اربعین کے لیے ہوائی ٹکٹ اور ویزا وغیرہ کے اخراجات ادا کیے جائیں گے جزاکم الله خیراً

|   30 Jun 2018     ❗کاروان قرآن امتحان میں شرکت کرنے والے برادران و خواہران توجہ فرمائیں❗ 👈 ۱۔ لاہور اور کراچی کے جن افراد کو پتہ (ایڈریس) بھیجا جا چکا ہے وہ امتحان شروع ہونے کے مقررہ وقت (تین بجے بعد دوپہر) سے کچھ دیر قبل وہاں پہنچ جائیں تا کہ پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے 👈 ۲۔ فیصل آباد اور گرد و نواح کے علاقوں کے افراد کا امتحان جامعہ بعثت رجوعہ سادات ضلع چنیوٹ میں منعقد کیا جائے گا 👈 ۳۔ دیگر شہروں سے تعلّق رکھنے والے افراد کے امتحان کا وقت بھی تین بجے بعد دوپہر ہے۔ مزید تفصیلات واٹس ایپ کے ذریعہ آپ کو بھیج دی جائیں گی جزاکم الله خیراً

|   28 Jun 2018     ❗ضروری اعلان❗ کاروان قرآن کے پروگرام “قرآن سے امام ع تک” کے 👈 1 جولائی 2018 بروز اتوار 👉 کو منعقد ہونے والے امتحان میں شرکت کے لیے جن افراد نے ابھی تک اپنا نام اور شہر لکھ کر اس نمبر (923217700647+) پر WhatsApp کے ذریعہ نہیں بھیجا ان سے گزارش ہے کہ جلد از جلد بھیج دیں! بصورت دیگر امتحان میں شرکت ممکن نہیں ہو گی جزاکم الله خیراً

Ash-Shu'ara

Translation:

بِسْمِ اللہِ الرَّحْمَـٰنِ الرَّحِيمِ
بنام خدائے رحمن رحیم
طسم
طا، سین، میم
26:1
تِلْكَ آيَاتُ الْكِتَابِ الْمُبِينِ
یہ کتاب مبین کی آیات ہیں۔
26:2
لَعَلَّكَ بَاخِعٌ نَفْسَكَ أَلَّا يَكُونُوا مُؤْمِنِينَ
شاید اس رنج سے کہ یہ لوگ ایمان نہیں لاتے آپ اپنی جان کھو دیں گے۔
26:3
إِنْ نَشَأْ نُنَزِّلْ عَلَيْهِمْ مِنَ السَّمَاءِ آيَةً فَظَلَّتْ أَعْنَاقُهُمْ لَهَا خَاضِعِينَ
اگر ہم چاہیں تو ان پر آسمان سے ایسی نشانیاں نازل کر دیں جس کے آگے ان کی گردنیں جھک جائیں ۔
26:4
وَمَا يَأْتِيهِمْ مِنْ ذِكْرٍ مِنَ الرَّحْمَٰنِ مُحْدَثٍ إِلَّا كَانُوا عَنْهُ مُعْرِضِينَ
اور ان کے پاس رحمن کی طرف سے جو بھی تازہ نصیحت آتی ہے تو یہ اس سے منہ موڑ لیتے ہیں۔
26:5
فَقَدْ كَذَّبُوا فَسَيَأْتِيهِمْ أَنْبَاءُ مَا كَانُوا بِهِ يَسْتَهْزِئُونَ
یہ تکذیب کر بیٹھے ہیں تو جس چیز کا یہ لوگ مذاق اڑاتے تھے اب عنقریب اس کی خبریں آنے والی ہیں۔
26:6
أَوَلَمْ يَرَوْا إِلَى الْأَرْضِ كَمْ أَنْبَتْنَا فِيهَا مِنْ كُلِّ زَوْجٍ كَرِيمٍ
کیا انہوں نے کبھی زمین کی طرف نہیں دیکھا کہ ہم نے اس میں کتنی وافر مقدار میں ہر قسم کی نفیس نباتات اگائی ہیں؟
26:7
إِنَّ فِي ذَٰلِكَ لَآيَةً ۖ وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُمْ مُؤْمِنِينَ
اس میں یقینا ایک نشانی ضرور ہے مگر ان میں سے اکثر نہیں مانتے۔
26:8
وَإِنَّ رَبَّكَ لَهُوَ الْعَزِيزُ الرَّحِيمُ
اور یقینا آپ کا رب ہی بڑا غالب آنے ولا، رحم کرنے والا ہے۔
26:9
وَإِذْ نَادَىٰ رَبُّكَ مُوسَىٰ أَنِ ائْتِ الْقَوْمَ الظَّالِمِينَ
اور (وہ وقت یاد کریں) جب آپ کے رب نے موسیٰ کو پکارا (اور کہا) کہ آپ ظالم لوگوں کے پاس جائیں،
26:10
قَوْمَ فِرْعَوْنَ ۚ أَلَا يَتَّقُونَ
(یعنی) فرعون کی قوم کے پاس، کیا وہ ڈرتے نہیں؟
26:11
قَالَ رَبِّ إِنِّي أَخَافُ أَنْ يُكَذِّبُونِ
موسیٰ نے عرض کی: پروردگارا! مجھے اس بات کا خوف ہے کہ وہ میری تکذیب کریں گے۔
26:12
وَيَضِيقُ صَدْرِي وَلَا يَنْطَلِقُ لِسَانِي فَأَرْسِلْ إِلَىٰ هَارُونَ
اور میرا سینہ تنگ ہو رہا ہے اور میری زبان نہیں چلتی سو تو ہارون کو (پیغام) بھیج (کہ میرا ساتھ دیں)۔
26:13
وَلَهُمْ عَلَيَّ ذَنْبٌ فَأَخَافُ أَنْ يَقْتُلُونِ
اور ان لوگوں کے لیے میرے ذمے ایک جرم (کا دعویٰ) بھی ہے لہٰذا مجھے خوف ہے کہ وہ مجھے قتل کر دیں گے۔
26:14
قَالَ كَلَّا ۖ فَاذْهَبَا بِآيَاتِنَا ۖ إِنَّا مَعَكُمْ مُسْتَمِعُونَ
فرمایا: ہرگز نہیں! آپ دونوں ہماری نشانیاں لے کر جائیں کہ ہم آپ کے ساتھ سنتے رہیں گے۔
26:15
فَأْتِيَا فِرْعَوْنَ فَقُولَا إِنَّا رَسُولُ رَبِّ الْعَالَمِينَ
آپ دونوں فرعون کے پاس جائیں اور (اس سے) کہیں: ہم رب العالمین کے رسول ہیں،
26:16
أَنْ أَرْسِلْ مَعَنَا بَنِي إِسْرَائِيلَ
کہ تو بنی اسرائیل کو ہمارے ساتھ بھیج دے ۔
26:17
قَالَ أَلَمْ نُرَبِّكَ فِينَا وَلِيدًا وَلَبِثْتَ فِينَا مِنْ عُمُرِكَ سِنِينَ
فرعون نے کہا: کیا ہم نے تجھے بچپن میں اپنے ہاں نہیں پالا؟ اور تو نے اپنی عمر کے کئی سال ہمارے ہاں بسر کیے۔
26:18
وَفَعَلْتَ فَعْلَتَكَ الَّتِي فَعَلْتَ وَأَنْتَ مِنَ الْكَافِرِينَ
اور تو کر گیا اپنی وہ کرتوت جو کر گیا اور تو ناشکروں میں سے ہے۔
26:19
قَالَ فَعَلْتُهَا إِذًا وَأَنَا مِنَ الضَّالِّينَ
موسیٰ نے کہا: ہاں اس وقت وہ حرکت مجھ سے سرزد ہو گئی تھی اور میں خطاکاروں میں سے تھا۔
26:20
فَفَرَرْتُ مِنْكُمْ لَمَّا خِفْتُكُمْ فَوَهَبَ لِي رَبِّي حُكْمًا وَجَعَلَنِي مِنَ الْمُرْسَلِينَ
اسی لیے جب میں نے تم لوگوں سے خوف محسوس کیا تو میں نے تم سے گریز کیا پھر میرے رب نے مجھے حکمت عنایت فرمائی اور مجھے رسولوں میں سے قرار دیا۔
26:21
وَتِلْكَ نِعْمَةٌ تَمُنُّهَا عَلَيَّ أَنْ عَبَّدْتَ بَنِي إِسْرَائِيلَ
اور تم مجھ پر اس بات کا احسان جتاتے ہو کہ تم نے بنی اسرائیل کو غلام بنائے رکھا ہے؟ (یہ تو غلامی تھی احسان نہیں تھا)۔
26:22
قَالَ فِرْعَوْنُ وَمَا رَبُّ الْعَالَمِينَ
فرعون نے کہا: اور رب العالمین کیا ہے؟
26:23
قَالَ رَبُّ السَّمَاوَاتِ وَالْأَرْضِ وَمَا بَيْنَهُمَا ۖ إِنْ كُنْتُمْ مُوقِنِينَ
موسیٰ نے کہا : آسمانوں اور زمین اور جو کچھ ان دونوں کے درمیان ہے سب کا رب، اگر تم یقین کرنے والے ہو۔
26:24
قَالَ لِمَنْ حَوْلَهُ أَلَا تَسْتَمِعُونَ
فرعون نے اپنے اردگرد کے درباریوں سے کہا : کیا تم سنتے نہیں ہو؟
26:25
قَالَ رَبُّكُمْ وَرَبُّ آبَائِكُمُ الْأَوَّلِينَ
موسیٰ نے کہا: وہ تمہارا اور تمہارے پہلے باپ دادا کا پروردگار ہے۔
26:26
قَالَ إِنَّ رَسُولَكُمُ الَّذِي أُرْسِلَ إِلَيْكُمْ لَمَجْنُونٌ
فرعون نے (لوگوں سے)کہا: جو رسول تمہاری طرف بھیجا گیا ہے وہ دیوانہ ہے۔
26:27
قَالَ رَبُّ الْمَشْرِقِ وَالْمَغْرِبِ وَمَا بَيْنَهُمَا ۖ إِنْ كُنْتُمْ تَعْقِلُونَ
موسیٰ نے کہا: وہ مشرق و مغرب اور جو کچھ ان دونوں کے درمیان ہے کا پروردگار ہے، اگر تم عقل رکھتے ہو۔
26:28
قَالَ لَئِنِ اتَّخَذْتَ إِلَٰهًا غَيْرِي لَأَجْعَلَنَّكَ مِنَ الْمَسْجُونِينَ
فرعون نے کہا: اگر تم نے میرے علاوہ کسی اور کو معبود بنایا تو میں تمہیں قیدیوں میں شامل کروں گا۔
26:29
قَالَ أَوَلَوْ جِئْتُكَ بِشَيْءٍ مُبِينٍ
موسیٰ نے کہا: اگر میں تیرے پاس واضح چیز (معجزہ) لے آؤں تو؟
26:30
قَالَ فَأْتِ بِهِ إِنْ كُنْتَ مِنَ الصَّادِقِينَ
فرعون نے کہا: اگر تم سچے ہو تو اسے لے آؤ۔
26:31
فَأَلْقَىٰ عَصَاهُ فَإِذَا هِيَ ثُعْبَانٌ مُبِينٌ
پس موسیٰ نے اپنا عصا ڈال دیا تو وہ دفعتاً نمایاں اژدھا بن گیا۔
26:32
وَنَزَعَ يَدَهُ فَإِذَا هِيَ بَيْضَاءُ لِلنَّاظِرِينَ
اور (گریبان سے) اپنا ہاتھ نکالا تو وہ تمام ناظرین کے لیے چمک رہا تھا۔
26:33
قَالَ لِلْمَلَإِ حَوْلَهُ إِنَّ هَٰذَا لَسَاحِرٌ عَلِيمٌ
فرعون نے اپنے گرد و پیش کے درباریوں سے کہا: یقینا یہ شخص بڑا ماہر جادوگر ہے۔
26:34
يُرِيدُ أَنْ يُخْرِجَكُمْ مِنْ أَرْضِكُمْ بِسِحْرِهِ فَمَاذَا تَأْمُرُونَ
وہ چاہتا ہے کہ اپنے جادو کے ذریعے تمہیں تمہاری سرزمین سے نکال باہر کرے تو اب تم کیا مشورہ دیتے ہو؟
26:35
قَالُوا أَرْجِهْ وَأَخَاهُ وَابْعَثْ فِي الْمَدَائِنِ حَاشِرِينَ
وہ کہنے لگے : اسے اور اس کے بھائی کو مہلت دو اور شہروں میں ہرکارے بھیج دو
26:36
يَأْتُوكَ بِكُلِّ سَحَّارٍ عَلِيمٍ
کہ وہ تمام ماہر جادوگروں کو تمہارے پاس لے آئیں ۔
26:37
فَجُمِعَ السَّحَرَةُ لِمِيقَاتِ يَوْمٍ مَعْلُومٍ
چنانچہ مقررہ دن کے مقررہ وقت پر جادوگر جمع کر لیے گئے ۔
26:38
وَقِيلَ لِلنَّاسِ هَلْ أَنْتُمْ مُجْتَمِعُونَ
اور لوگوں سے کہا گیا کیا تم جمع ہو جاؤ گے؟
26:39
لَعَلَّنَا نَتَّبِعُ السَّحَرَةَ إِنْ كَانُوا هُمُ الْغَالِبِينَ
شاید ہم جادوگروں کے پیچھے چلیں اگر یہ لوگ غالب رہیں ۔
26:40
فَلَمَّا جَاءَ السَّحَرَةُ قَالُوا لِفِرْعَوْنَ أَئِنَّ لَنَا لَأَجْرًا إِنْ كُنَّا نَحْنُ الْغَالِبِينَ
جب جادوگر آ گئے تو فرعون سے کہنے لگے: اگر ہم غالب رہے تو ہمارے لیے کوئی صلہ بھی ہو گا؟
26:41
قَالَ نَعَمْ وَإِنَّكُمْ إِذًا لَمِنَ الْمُقَرَّبِينَ
فرعون نے کہا: ہاں! اور اس صورت میں تو تم مقربین میں سے ہو جاؤ گے۔
26:42
قَالَ لَهُمْ مُوسَىٰ أَلْقُوا مَا أَنْتُمْ مُلْقُونَ
موسیٰ نے ان سے کہا: تمہیں جو پھینکنا ہے پھینکو۔
26:43
فَأَلْقَوْا حِبَالَهُمْ وَعِصِيَّهُمْ وَقَالُوا بِعِزَّةِ فِرْعَوْنَ إِنَّا لَنَحْنُ الْغَالِبُونَ
انہوں نے اپنی رسیاں اور لاٹھیاں ڈال دیں اور کہنے لگے: فرعون کے جاہ و جلال کی قسم بے شک ہم ہی غالب آئیں گے۔
26:44
فَأَلْقَىٰ مُوسَىٰ عَصَاهُ فَإِذَا هِيَ تَلْقَفُ مَا يَأْفِكُونَ
پھر موسیٰ نے اپنا عصا ڈال دیا تو اس نے دفعتاً ان کے سارے خود ساختہ دھندے کو نگل لیا۔
26:45
فَأُلْقِيَ السَّحَرَةُ سَاجِدِينَ
اس پر تمام جادوگر سجدے میں گر پڑے۔
26:46
قَالُوا آمَنَّا بِرَبِّ الْعَالَمِينَ
کہنے لگے: ہم عالمین کے پروردگار پر ایمان لے آئے،
26:47
رَبِّ مُوسَىٰ وَهَارُونَ
موسیٰ اور ہارون کے رب پر۔
26:48
قَالَ آمَنْتُمْ لَهُ قَبْلَ أَنْ آذَنَ لَكُمْ ۖ إِنَّهُ لَكَبِيرُكُمُ الَّذِي عَلَّمَكُمُ السِّحْرَ فَلَسَوْفَ تَعْلَمُونَ ۚ لَأُقَطِّعَنَّ أَيْدِيَكُمْ وَأَرْجُلَكُمْ مِنْ خِلَافٍ وَلَأُصَلِّبَنَّكُمْ أَجْمَعِينَ
فرعون نے کہا: میری اجازت سے پہلے تم موسیٰ کو مان گئے؟ یقینا یہ (موسیٰ) تمہارا بڑا ہے جس نے تمہیں جادو سکھایا ہے ابھی تمہیں (تمہارا انجام) معلوم ہو جائے گا، میں تمہارے ہاتھ اور تمہارے پاؤں مخالف سمتوں سے ضرور کٹوا دوں گا اور تم سب کو ضرور سولی پر لٹکا دوں گا۔
26:49
قَالُوا لَا ضَيْرَ ۖ إِنَّا إِلَىٰ رَبِّنَا مُنْقَلِبُونَ
۔وہ بولے کوئی حرج نہیں ہم اپنے رب کے حضور لوٹ جائیں گے،
26:50
إِنَّا نَطْمَعُ أَنْ يَغْفِرَ لَنَا رَبُّنَا خَطَايَانَا أَنْ كُنَّا أَوَّلَ الْمُؤْمِنِينَ
ہم امید رکھتے ہیں کہ ہمارا رب ہماری خطاؤں سے درگزر فرمائے گا کیونکہ ہم سب سے پہلے ایمان لائے ہیں۔
26:51
وَأَوْحَيْنَا إِلَىٰ مُوسَىٰ أَنْ أَسْرِ بِعِبَادِي إِنَّكُمْ مُتَّبَعُونَ
اور ہم نے موسیٰ کی طرف وحی بھیجی کہ میرے بندوں کو لے کر رات کو نکل پڑیں یقینا آپ کا تعاقب کیا جائے گا۔
26:52
فَأَرْسَلَ فِرْعَوْنُ فِي الْمَدَائِنِ حَاشِرِينَ
(ادھر) فرعون نے شہروں میں ہرکارے بھیج دیے،
26:53
إِنَّ هَٰؤُلَاءِ لَشِرْذِمَةٌ قَلِيلُونَ
(ان کے ساتھ یہ کہلا بھیجا) کہ بے شک یہ لوگ چھوٹی سی جماعت ہیں۔
26:54
وَإِنَّهُمْ لَنَا لَغَائِظُونَ
اور انہوں نے ہمیں بہت غصہ دلایا ہے۔
26:55
وَإِنَّا لَجَمِيعٌ حَاذِرُونَ
اور اب ہم سب پوری طرح مستعد ہیں۔
26:56
فَأَخْرَجْنَاهُمْ مِنْ جَنَّاتٍ وَعُيُونٍ
چنانچہ ہم نے انہیں باغوں اور چشموں سے نکال دیا ہے۔
26:57
وَكُنُوزٍ وَمَقَامٍ كَرِيمٍ
اور خزانوں اور بہترین رہائش گاہوں سے بھی۔
26:58
كَذَٰلِكَ وَأَوْرَثْنَاهَا بَنِي إِسْرَائِيلَ
اس طرح ہم نے بنی اسرائیل کو ان کا وارث بنا دیا ۔
26:59
فَأَتْبَعُوهُمْ مُشْرِقِينَ
چنانچہ صبح ہوتے ہی (فرعون کے) لوگ ان کے تعاقب میں نکل پڑے۔
26:60
فَلَمَّا تَرَاءَى الْجَمْعَانِ قَالَ أَصْحَابُ مُوسَىٰ إِنَّا لَمُدْرَكُونَ
جب دونوں گروہ ایک دوسرے کو دکھائی دینے لگے تو موسیٰ کے ساتھیوں نے کہا: ہم تو پکڑے جانے والے ہیں۔
26:61
قَالَ كَلَّا ۖ إِنَّ مَعِيَ رَبِّي سَيَهْدِينِ
موسیٰ نے کہا: ہرگز نہیں! میرا پروردگار یقینا میرے ساتھ ہے، وہ مجھے راستہ دکھا دے گا۔
26:62
فَأَوْحَيْنَا إِلَىٰ مُوسَىٰ أَنِ اضْرِبْ بِعَصَاكَ الْبَحْرَ ۖ فَانْفَلَقَ فَكَانَ كُلُّ فِرْقٍ كَالطَّوْدِ الْعَظِيمِ
پھر ہم نے موسیٰ کی طرف وحی کی اپنا عصا سمندر پر ماریں چنانچہ دریا پھٹ گیا اور اس کا ہر حصہ عظیم پہاڑ کی طرح ہو گیا۔
26:63
وَأَزْلَفْنَا ثَمَّ الْآخَرِينَ
اور وہاں ہم نے دوسرے گروہ کو بھی نزدیک کر دیا ،
26:64
وَأَنْجَيْنَا مُوسَىٰ وَمَنْ مَعَهُ أَجْمَعِينَ
پھر ہم نے موسیٰ اور ان کے تمام ساتھیوں کو بچا لیا۔
26:65
ثُمَّ أَغْرَقْنَا الْآخَرِينَ
اس کے بعد دوسروں کو غرق کر دیا۔
26:66
إِنَّ فِي ذَٰلِكَ لَآيَةً ۖ وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُمْ مُؤْمِنِينَ
اس واقعے میں ایک نشانی ہے پھر بھی ان میں سے اکثر ایمان نہیں لائے۔
26:67
وَإِنَّ رَبَّكَ لَهُوَ الْعَزِيزُ الرَّحِيمُ
اور یقینا آپ کا پروردگار ہی بڑا غالب آنے والا، رحم کرنے والا ہے۔
26:68
وَاتْلُ عَلَيْهِمْ نَبَأَ إِبْرَاهِيمَ
اور انہیں ابراہیم کا واقعہ (بھی) سنا دیجئے:
26:69
إِذْ قَالَ لِأَبِيهِ وَقَوْمِهِ مَا تَعْبُدُونَ
انہوں نے اپنے باپ (چچا) اور اپنی قوم سے کہا: تم کس چیز کو پوجتے ہو؟
26:70
قَالُوا نَعْبُدُ أَصْنَامًا فَنَظَلُّ لَهَا عَاكِفِينَ
انہوں نے جواب دیا: ہم بتوں کو پوجتے ہیں اور اس پر ہم قائم رہتے ہیں۔
26:71
قَالَ هَلْ يَسْمَعُونَكُمْ إِذْ تَدْعُونَ
ابراہیم نے کہا: جب تم انہیں پکارتے ہو تو کیا یہ تمہاری سنتے ہیں؟
26:72
أَوْ يَنْفَعُونَكُمْ أَوْ يَضُرُّونَ
یا تمہیں فائدہ یا ضرر دیتے ہیں ؟
26:73
قَالُوا بَلْ وَجَدْنَا آبَاءَنَا كَذَٰلِكَ يَفْعَلُونَ
انہوں نے کہا: (نہیں) بلکہ ہم نے تو اپنے باپ دادا کو ایسا کرتے پایا ہے۔
26:74
قَالَ أَفَرَأَيْتُمْ مَا كُنْتُمْ تَعْبُدُونَ
ابراہیم نے کہا: کیا تم نے ان کی حالت دیکھی ہے جنہیں تم پوجتے ہو؟
26:75
أَنْتُمْ وَآبَاؤُكُمُ الْأَقْدَمُونَ
تم اور تمہارے گزشتہ باپ دادا بھی (پوجتے رہے ہیں) ۔
26:76
فَإِنَّهُمْ عَدُوٌّ لِي إِلَّا رَبَّ الْعَالَمِينَ
یقینا یہ سب میرے دشمن ہیں سوائے رب العالمین کے،
26:77
الَّذِي خَلَقَنِي فَهُوَ يَهْدِينِ
جس نے مجھے پیدا کیا پھر وہی مجھے ہدایت دیتا ہے،
26:78
وَالَّذِي هُوَ يُطْعِمُنِي وَيَسْقِينِ
اور وہی مجھے کھلاتا اور پلاتا ہے،
26:79
وَإِذَا مَرِضْتُ فَهُوَ يَشْفِينِ
اور جب میں بیمار ہو جاتا ہوں تو وہی مجھے شفا دیتا ہے۔
26:80
وَالَّذِي يُمِيتُنِي ثُمَّ يُحْيِينِ
اور وہی مجھے موت دے گا پھر مجھے زندگی عطا کرے گا۔
26:81
وَالَّذِي أَطْمَعُ أَنْ يَغْفِرَ لِي خَطِيئَتِي يَوْمَ الدِّينِ
اور میں اسی سے امید رکھتا ہوں کہ روز قیامت میری خطاؤں سے درگزر فرمائے گا۔
26:82
رَبِّ هَبْ لِي حُكْمًا وَأَلْحِقْنِي بِالصَّالِحِينَ
پروردگارا! مجھے حکمت عطا کر اور صالحین میں شامل فرما۔
26:83
وَاجْعَلْ لِي لِسَانَ صِدْقٍ فِي الْآخِرِينَ
اور آنے والوں میں مجھے حقیقی ذکر جمیل عطا فرما۔
26:84
وَاجْعَلْنِي مِنْ وَرَثَةِ جَنَّةِ النَّعِيمِ
اور مجھے نعمتوں والی جنت کے وارثوں میں قرار دے۔
26:85
وَاغْفِرْ لِأَبِي إِنَّهُ كَانَ مِنَ الضَّالِّينَ
اور میرے باپ (چچا) کو بخش دے کیونکہ وہ گمراہوں میں سے ہے۔
26:86
وَلَا تُخْزِنِي يَوْمَ يُبْعَثُونَ
اور مجھے اس روز رسوا نہ کرنا جب لوگ (دوبارہ) اٹھائے جائیں گے۔
26:87
يَوْمَ لَا يَنْفَعُ مَالٌ وَلَا بَنُونَ
اس روز نہ مال کچھ فائدہ دے گا اور نہ اولاد۔
26:88
إِلَّا مَنْ أَتَى اللَّهَ بِقَلْبٍ سَلِيمٍ
سوائے اس کے جو اللہ کے حضور قلب سلیم لے کر آئے۔
26:89
وَأُزْلِفَتِ الْجَنَّةُ لِلْمُتَّقِينَ
اس روز جنت پرہیزگاروں کے نزدیک لائی جائے گی۔
26:90
وَبُرِّزَتِ الْجَحِيمُ لِلْغَاوِينَ
اور جہنم گمراہوں کے لیے ظاہر کی جائے گی۔
26:91
وَقِيلَ لَهُمْ أَيْنَ مَا كُنْتُمْ تَعْبُدُونَ
۔ پھر ان سے پوچھا جائے گا : تمہارے وہ معبود کہاں ہیں؟
26:92
مِنْ دُونِ اللَّهِ هَلْ يَنْصُرُونَكُمْ أَوْ يَنْتَصِرُونَ
اللہ کو چھوڑ کر (جنہیں تم پوجتے تھے) کیا وہ تمہاری مدد کر رہے ہیں یا خود کو بچا سکتے ہیں؟
26:93
فَكُبْكِبُوا فِيهَا هُمْ وَالْغَاوُونَ
چنانچہ یہ خود اور گمراہ لوگ منہ کے بل جہنم میں گرا دیے جائیں گے۔
26:94
وَجُنُودُ إِبْلِيسَ أَجْمَعُونَ
اور سارے ابلیسی لشکر سمیت۔
26:95
قَالُوا وَهُمْ فِيهَا يَخْتَصِمُونَ
۔ اور وہ اس میں جھگڑتے ہوئے کہیں گے:
26:96
تَاللَّهِ إِنْ كُنَّا لَفِي ضَلَالٍ مُبِينٍ
قسم بخدا! ہم تو صریح گمراہی میں تھے۔
26:97
إِذْ نُسَوِّيكُمْ بِرَبِّ الْعَالَمِينَ
جب ہم تمہیں رب العالمین کے برابر درجہ دیتے تھے۔
26:98
وَمَا أَضَلَّنَا إِلَّا الْمُجْرِمُونَ
اور ہمیں تو ان مجرموں نے گمراہ کیا ہے۔
26:99
فَمَا لَنَا مِنْ شَافِعِينَ
(آج) ہمارے لیے نہ تو کوئی شفاعت کرنے والا ہے،
26:100
وَلَا صَدِيقٍ حَمِيمٍ
اور نہ کوئی سچا دوست ہے۔
26:101
فَلَوْ أَنَّ لَنَا كَرَّةً فَنَكُونَ مِنَ الْمُؤْمِنِينَ
کاش! ہمیں ایک مرتبہ پھر پلٹنے کا موقع مل جاتا تو ہم مومنین میں سے ہوتے۔
26:102
إِنَّ فِي ذَٰلِكَ لَآيَةً ۖ وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُمْ مُؤْمِنِينَ
یقینا اس میں ایک نشانی ہے لیکن ان میں اکثر ایمان نہیں لاتے۔
26:103
وَإِنَّ رَبَّكَ لَهُوَ الْعَزِيزُ الرَّحِيمُ
اور یقینا آپ کا پروردگار ہی غالب آنے والا، رحم کرنے والا ہے۔
26:104
كَذَّبَتْ قَوْمُ نُوحٍ الْمُرْسَلِينَ
نوح کی قوم نے بھی پیغمبروں کی تکذیب کی۔
26:105
إِذْ قَالَ لَهُمْ أَخُوهُمْ نُوحٌ أَلَا تَتَّقُونَ
جب ان کی برادری کے نوح نے ان سے کہا: کیا تم اپنا بچاؤ نہیں کرتے ہو؟
26:106
إِنِّي لَكُمْ رَسُولٌ أَمِينٌ
میں تمہارے لیے ایک امانتدار رسول ہوں،
26:107
فَاتَّقُوا اللَّهَ وَأَطِيعُونِ
لہٰذا تم اللہ سے ڈرو اور میری اطاعت کرو۔
26:108
وَمَا أَسْأَلُكُمْ عَلَيْهِ مِنْ أَجْرٍ ۖ إِنْ أَجْرِيَ إِلَّا عَلَىٰ رَبِّ الْعَالَمِينَ
اور اس کام پر میں تم سے کوئی اجر نہیں مانگتا میرا اجر تو صرف رب العالمین پر ہے۔
26:109
فَاتَّقُوا اللَّهَ وَأَطِيعُونِ
لہٰذا تم اللہ سے ڈرو اور میری اطاعت کرو ۔
26:110
قَالُوا أَنُؤْمِنُ لَكَ وَاتَّبَعَكَ الْأَرْذَلُونَ
انہوں نے کہا: ہم تم پر کیسے ایمان لے آئیں جب کہ ادنی درجے کے لوگ تمہارے پیروکار ہیں۔
26:111
قَالَ وَمَا عِلْمِي بِمَا كَانُوا يَعْمَلُونَ
نوح نے کہا: مجھے علم نہیں وہ کیا کرتے رہے ہیں۔
26:112
إِنْ حِسَابُهُمْ إِلَّا عَلَىٰ رَبِّي ۖ لَوْ تَشْعُرُونَ
ان کا حساب تو صرف میرے رب کے ذمے ہے، کاش تم اسے سمجھتے۔
26:113
وَمَا أَنَا بِطَارِدِ الْمُؤْمِنِينَ
اور میں مومنوں کو دھتکار نہیں سکتا۔
26:114
إِنْ أَنَا إِلَّا نَذِيرٌ مُبِينٌ
میں تو صرف صاف اور صریح انداز میں تنبیہ کرنے والا ہوں۔
26:115
قَالُوا لَئِنْ لَمْ تَنْتَهِ يَا نُوحُ لَتَكُونَنَّ مِنَ الْمَرْجُومِينَ
ان لوگوں نے کہا: اے نوح! اگر تم باز نہ آئے تو تمہیں ضرور سنگسار کر دیا جائے گا۔
26:116
قَالَ رَبِّ إِنَّ قَوْمِي كَذَّبُونِ
نوح نے کہا: اے میرے پروردگار! بتحقیق میری قوم نے میری تکذیب کی ہے۔
26:117
فَافْتَحْ بَيْنِي وَبَيْنَهُمْ فَتْحًا وَنَجِّنِي وَمَنْ مَعِيَ مِنَ الْمُؤْمِنِينَ
پس تو ہی میرے اور ان کے درمیان حتمی فیصلہ فرما اور مجھے اور جو میرے ساتھ مؤمنین ہیں ان کو نجات دے۔
26:118
فَأَنْجَيْنَاهُ وَمَنْ مَعَهُ فِي الْفُلْكِ الْمَشْحُونِ
چنانچہ ہم نے انہیں اور جو ان کے ہمراہ بھری کشتی میں سوار تھے سب کو بچا لیا۔
26:119
ثُمَّ أَغْرَقْنَا بَعْدُ الْبَاقِينَ
اس کے بعد ہم نے باقی سب کو غرق کر دیا۔
26:120
إِنَّ فِي ذَٰلِكَ لَآيَةً ۖ وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُمْ مُؤْمِنِينَ
یقینا اس میں بھی ایک نشانی ہے لیکن ان میں سے اکثر ایمان نہیں لاتے۔
26:121
وَإِنَّ رَبَّكَ لَهُوَ الْعَزِيزُ الرَّحِيمُ
اور یقینا آپ کا رب ہی بڑا غالب آنے والا، رحم کرنے والا ہے۔
26:122
كَذَّبَتْ عَادٌ الْمُرْسَلِينَ
قوم عاد نے پیغمبروں کی تکذیب کی۔
26:123
إِذْ قَالَ لَهُمْ أَخُوهُمْ هُودٌ أَلَا تَتَّقُونَ
جب ان کی برادری کے ہود نے ان سے کہا: کیا تم اپنا بچاؤ نہیں کرتے؟
26:124
إِنِّي لَكُمْ رَسُولٌ أَمِينٌ
میں تمہارے لیے ایک امانتدار رسول ہوں۔
26:125
فَاتَّقُوا اللَّهَ وَأَطِيعُونِ
لہٰذا اللہ سے ڈرو اور میری اطاعت کرو۔
26:126
وَمَا أَسْأَلُكُمْ عَلَيْهِ مِنْ أَجْرٍ ۖ إِنْ أَجْرِيَ إِلَّا عَلَىٰ رَبِّ الْعَالَمِينَ
اور اس کام پر میں تم سے اجر نہیں مانگتا، میرا اجر تو صرف رب العالمین پر ہے۔
26:127
أَتَبْنُونَ بِكُلِّ رِيعٍ آيَةً تَعْبَثُونَ
کیا تم ہر اونچی جگہ پر ایک بے سود یادگار بناتے ہو؟
26:128
وَتَتَّخِذُونَ مَصَانِعَ لَعَلَّكُمْ تَخْلُدُونَ
اور تم بڑے محلات بناتے ہو گویا تم نے ہمیشہ رہنا ہے۔
26:129
وَإِذَا بَطَشْتُمْ بَطَشْتُمْ جَبَّارِينَ
اور جب تم (کسی پر) حملہ کرتے ہو تو نہایت جابرانہ انداز میں حملہ آور ہوتے ہو۔
26:130
فَاتَّقُوا اللَّهَ وَأَطِيعُونِ
پس اللہ سے ڈرو اور میری اطاعت کرو۔
26:131
وَاتَّقُوا الَّذِي أَمَدَّكُمْ بِمَا تَعْلَمُونَ
نیز اس سے ڈرو جس نے ان چیزوں سے تمہاری مدد کی جن کا تمہیں (بخوبی) علم ہے۔
26:132
أَمَدَّكُمْ بِأَنْعَامٍ وَبَنِينَ
اس نے تمہیں جانوروں اور اولاد سے نوازا ۔
26:133
وَجَنَّاتٍ وَعُيُونٍ
نیز باغات اور چشموں سے مالا مال کر دیا۔
26:134
إِنِّي أَخَافُ عَلَيْكُمْ عَذَابَ يَوْمٍ عَظِيمٍ
بلاشبہ مجھے تمہارے بارے میں ایک بڑے دن کے عذاب کا خوف ہے۔
26:135
قَالُوا سَوَاءٌ عَلَيْنَا أَوَعَظْتَ أَمْ لَمْ تَكُنْ مِنَ الْوَاعِظِينَ
انہوں نے کہا: تم نصیحت کرو یا نہ کرو ہمارے لیے یکساں ہے۔
26:136
إِنْ هَٰذَا إِلَّا خُلُقُ الْأَوَّلِينَ
یہ تو بس پرانے لوگوں کی عادات ہیں۔
26:137
وَمَا نَحْنُ بِمُعَذَّبِينَ
اور ہمیں عذاب نہیں دیا جائے گا۔
26:138
فَكَذَّبُوهُ فَأَهْلَكْنَاهُمْ ۗ إِنَّ فِي ذَٰلِكَ لَآيَةً ۖ وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُمْ مُؤْمِنِينَ
(اس طرح) انہوں نے ہود کو جھٹلایا تو ہم نے انہیں ہلاکت میں ڈال دیا، یقینا اس میں بھی ایک نشانی ہے لیکن ان میں سے اکثر لوگ ایمان لانے والے نہ تھے۔
26:139
وَإِنَّ رَبَّكَ لَهُوَ الْعَزِيزُ الرَّحِيمُ
اور بتحقیق آپ کا پروردگار ہی بڑا غالب آنے والا، بڑا رحم کرنے والا ہے۔
26:140
كَذَّبَتْ ثَمُودُ الْمُرْسَلِينَ
(قوم) ثمود نے بھی رسولوں کو جھٹلایا۔
26:141
إِذْ قَالَ لَهُمْ أَخُوهُمْ صَالِحٌ أَلَا تَتَّقُونَ
جب ان کی برادری کے صالح نے ان سے کہا: کیا تم اپنا بچاؤ نہیں کرتے ؟
26:142
إِنِّي لَكُمْ رَسُولٌ أَمِينٌ
میں تمہارے لیے ایک امانتدار رسول ہوں۔
26:143
فَاتَّقُوا اللَّهَ وَأَطِيعُونِ
پس اللہ سے ڈرو اور میری اطاعت کرو۔
26:144
وَمَا أَسْأَلُكُمْ عَلَيْهِ مِنْ أَجْرٍ ۖ إِنْ أَجْرِيَ إِلَّا عَلَىٰ رَبِّ الْعَالَمِينَ
اور اس بات پر میں تم سے کوئی اجر نہیں مانگتا،میرا اجر تو صرف رب العالمین پر ہے۔
26:145
أَتُتْرَكُونَ فِي مَا هَاهُنَا آمِنِينَ
کیا تم لوگ یہاں پر موجود چیزوں (نعمتوں) میں یوں ہی بے فکر چھوڑ دیے جاؤ گے ؟
26:146
فِي جَنَّاتٍ وَعُيُونٍ
باغوں اور چشموں میں،
26:147
وَزُرُوعٍ وَنَخْلٍ طَلْعُهَا هَضِيمٌ
اور کھیتیوں اور کھجوروں میں جن کے نرم خوشے ہیں،
26:148
وَتَنْحِتُونَ مِنَ الْجِبَالِ بُيُوتًا فَارِهِينَ
اور تم پہاڑوں کو بڑی مہارت سے تراش کر گھر بناتے ہو۔
26:149
فَاتَّقُوا اللَّهَ وَأَطِيعُونِ
پس اللہ سے ڈرو اور میری اطاعت کرو۔
26:150
وَلَا تُطِيعُوا أَمْرَ الْمُسْرِفِينَ
اور حد سے تجاوز کرنے والوں کے حکم کی اطاعت نہ کرو۔
26:151
الَّذِينَ يُفْسِدُونَ فِي الْأَرْضِ وَلَا يُصْلِحُونَ
جو زمین میں فساد پھیلاتے ہیں اور اصلاح نہیں کرتے۔
26:152
قَالُوا إِنَّمَا أَنْتَ مِنَ الْمُسَحَّرِينَ
لوگوں نے کہا: تم تو بلاشبہ سحرزدہ آدمی ہو۔
26:153
مَا أَنْتَ إِلَّا بَشَرٌ مِثْلُنَا فَأْتِ بِآيَةٍ إِنْ كُنْتَ مِنَ الصَّادِقِينَ
اور تم ہم جیسے بشر کے سوا اور کچھ نہیں ہو، پس اگر تم سچے ہو تو کوئی نشانی (معجزہ ) پیش کرو۔
26:154
قَالَ هَٰذِهِ نَاقَةٌ لَهَا شِرْبٌ وَلَكُمْ شِرْبُ يَوْمٍ مَعْلُومٍ
صالح نے کہا: یہ ایک اونٹنی ہے، ایک مقررہ دن اس کے پانی پینے کی باری ہو گی اور ایک مقررہ دن تمہارے پانی پینے کی باری ہو گی۔
26:155
وَلَا تَمَسُّوهَا بِسُوءٍ فَيَأْخُذَكُمْ عَذَابُ يَوْمٍ عَظِيمٍ
اور اسے بری نیت سے نہ چھونا ورنہ ایک بڑے (ہولناک) دن کا عذاب تمہیں گرفت میں لے لے گا۔
26:156
فَعَقَرُوهَا فَأَصْبَحُوا نَادِمِينَ
تو انہوں نے اونٹنی کی کونچیں کاٹ ڈالیں پھر وہ ندامت میں مبتلا ہوئے۔
26:157
فَأَخَذَهُمُ الْعَذَابُ ۗ إِنَّ فِي ذَٰلِكَ لَآيَةً ۖ وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُمْ مُؤْمِنِينَ
چنانچہ عذاب نے انہیں گرفت میں لے لیا، یقینا اس میں ایک نشانی ہے لیکن ان میں سے اکثر ایمان نہیں لاتے۔
26:158
وَإِنَّ رَبَّكَ لَهُوَ الْعَزِيزُ الرَّحِيمُ
اور بے شک آپ کا پروردگار ہی بڑا غالب آنے والا، بڑا رحم کرنے والا ہے۔
26:159
كَذَّبَتْ قَوْمُ لُوطٍ الْمُرْسَلِينَ
قوم لوط نے (بھی) رسولوں کی تکذیب کی۔
26:160
إِذْ قَالَ لَهُمْ أَخُوهُمْ لُوطٌ أَلَا تَتَّقُونَ
جب ان کی برادری کے لوط نے ان سے کہا: کیا تم اپنا بچاؤ نہیں کرتے؟
26:161
إِنِّي لَكُمْ رَسُولٌ أَمِينٌ
میں تمہارے لیے ایک امانتدار رسول ہوں۔
26:162
فَاتَّقُوا اللَّهَ وَأَطِيعُونِ
پس اللہ سے ڈرو اور میری اطاعت کرو۔
26:163
وَمَا أَسْأَلُكُمْ عَلَيْهِ مِنْ أَجْرٍ ۖ إِنْ أَجْرِيَ إِلَّا عَلَىٰ رَبِّ الْعَالَمِينَ
اور میں اس کام پر تم سے کوئی اجر نہیں مانگتا میرا اجر تو بس رب العالمین پر ہے۔
26:164
أَتَأْتُونَ الذُّكْرَانَ مِنَ الْعَالَمِينَ
کیا ساری دنیا میں سے تم (شہوت رانی کے لیے) مردوں کے پاس ہی جاتے ہو؟
26:165
وَتَذَرُونَ مَا خَلَقَ لَكُمْ رَبُّكُمْ مِنْ أَزْوَاجِكُمْ ۚ بَلْ أَنْتُمْ قَوْمٌ عَادُونَ
اور تمہارے رب نے جو بیویاں تمہارے لیے خلق کی ہیں انہیں چھوڑ دیتے ہو؟ بلکہ تم تو حد سے تجاوز کرنے والی قوم ہو۔
26:166
قَالُوا لَئِنْ لَمْ تَنْتَهِ يَا لُوطُ لَتَكُونَنَّ مِنَ الْمُخْرَجِينَ
وہ کہنے لگے: اے لوط! اگر تو باز نہ آیا تو تجھے بھی ضرور نکال دیا جائے گا۔
26:167
قَالَ إِنِّي لِعَمَلِكُمْ مِنَ الْقَالِينَ
لوط نے کہا: میں تمہارے اس کردار کے سخت دشمنوں میں سے ہوں۔
26:168
رَبِّ نَجِّنِي وَأَهْلِي مِمَّا يَعْمَلُونَ
پروردگارا! مجھے اور میرے گھر والوں کو ان کے (برے) کردار سے نجات عطا فرما۔
26:169
فَنَجَّيْنَاهُ وَأَهْلَهُ أَجْمَعِينَ
چنانچہ ہم نے انہیں اور ان کے تمام اہل خانہ کو نجات دی۔
26:170
إِلَّا عَجُوزًا فِي الْغَابِرِينَ
سوائے ایک بڑھیا کے جو پیچھے رہنے والوں میں رہ گئی۔
26:171
ثُمَّ دَمَّرْنَا الْآخَرِينَ
پھر ہم نے باقی سب کو تباہ کر کے رکھ دیا۔
26:172
وَأَمْطَرْنَا عَلَيْهِمْ مَطَرًا ۖ فَسَاءَ مَطَرُ الْمُنْذَرِينَ
اور ان پر ہم نے بارش برسائی، پس تنبیہ شدہ لوگوں پر یہ بہت بری بارش تھی۔
26:173
إِنَّ فِي ذَٰلِكَ لَآيَةً ۖ وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُمْ مُؤْمِنِينَ
یقینا اس میں ایک نشانی ہے لیکن ان میں سے اکثر لوگ ایمان لانے والے نہیں۔
26:174
وَإِنَّ رَبَّكَ لَهُوَ الْعَزِيزُ الرَّحِيمُ
اور یقینا آپ کا رب ہی بڑا غالب آنے والا، بڑا رحم کرنے والا ہے۔
26:175
كَذَّبَ أَصْحَابُ الْأَيْكَةِ الْمُرْسَلِينَ
ایکہ والوں نے بھی رسولوں کی تکذیب کی۔
26:176
إِذْ قَالَ لَهُمْ شُعَيْبٌ أَلَا تَتَّقُونَ
جب شعیب نے ان سے کہا: کیا تم اپنا بچاؤ نہیں کرتے ؟
26:177
إِنِّي لَكُمْ رَسُولٌ أَمِينٌ
میں تمہارے لیے ایک امانتدار رسول ہوں۔
26:178
فَاتَّقُوا اللَّهَ وَأَطِيعُونِ
پس اللہ سے ڈرو اور میری اطاعت کرو۔
26:179
وَمَا أَسْأَلُكُمْ عَلَيْهِ مِنْ أَجْرٍ ۖ إِنْ أَجْرِيَ إِلَّا عَلَىٰ رَبِّ الْعَالَمِينَ
اور اس کام پر میں تم سے کوئی اجر نہیں مانگتا،میرا اجر تو صرف رب العالمین پر ہے۔
26:180
أَوْفُوا الْكَيْلَ وَلَا تَكُونُوا مِنَ الْمُخْسِرِينَ
تم پیمانہ پورا بھرو اور نقصان پہنچانے والوں میں سے نہ ہونا۔
26:181
وَزِنُوا بِالْقِسْطَاسِ الْمُسْتَقِيمِ
اور سیدھی ترازو سے تولا کرو۔
26:182
وَلَا تَبْخَسُوا النَّاسَ أَشْيَاءَهُمْ وَلَا تَعْثَوْا فِي الْأَرْضِ مُفْسِدِينَ
اور لوگوں کو ان کی چیزیں کم کر کے نہ دیا کرو اور زمین میں فساد پھیلاتے مت پھرو۔
26:183
وَاتَّقُوا الَّذِي خَلَقَكُمْ وَالْجِبِلَّةَ الْأَوَّلِينَ
اور اس اللہ سے ڈرو جس نے تمہیں اور گزشتہ نسلوں کو پیدا کیا ہے
26:184
قَالُوا إِنَّمَا أَنْتَ مِنَ الْمُسَحَّرِينَ
انہوں نے کہا: تم تو بس سحرزدہ ہو۔
26:185
وَمَا أَنْتَ إِلَّا بَشَرٌ مِثْلُنَا وَإِنْ نَظُنُّكَ لَمِنَ الْكَاذِبِينَ
اور تم تو بس ہم جیسے انسان ہو نیز ہمارا خیال ہے کہ تم جھوٹے ہو۔
26:186
فَأَسْقِطْ عَلَيْنَا كِسَفًا مِنَ السَّمَاءِ إِنْ كُنْتَ مِنَ الصَّادِقِينَ
پس تم سچے ہو تو آسمان کا کوئی ٹکڑا ہم پر گرا دو۔
26:187
قَالَ رَبِّي أَعْلَمُ بِمَا تَعْمَلُونَ
شعیب نے کہا: میرا پروردگار تمہارے اعمال سے خوب واقف ہے۔
26:188
فَكَذَّبُوهُ فَأَخَذَهُمْ عَذَابُ يَوْمِ الظُّلَّةِ ۚ إِنَّهُ كَانَ عَذَابَ يَوْمٍ عَظِيمٍ
انہوں نے شعیب کو جھٹلا ہی دیا، چنانچہ سائبان والے دن کے عذاب نے انہیں گرفت میں لے لیا، بے شک وہ بہت بڑے (ہولناک) دن کا عذاب تھا۔
26:189
إِنَّ فِي ذَٰلِكَ لَآيَةً ۖ وَمَا كَانَ أَكْثَرُهُمْ مُؤْمِنِينَ
اس میں یقینا ایک نشانی ہے لیکن ان میں سے اکثر ایمان لانے والے نہ تھے۔
26:190
وَإِنَّ رَبَّكَ لَهُوَ الْعَزِيزُ الرَّحِيمُ
اور یقینا آپ کا پروردگار ہی بڑا غالب آنے والا، بڑا رحم کرنے والا ہے۔
26:191
وَإِنَّهُ لَتَنْزِيلُ رَبِّ الْعَالَمِينَ
اور بتحقیق یہ (قرآن) رب العالمین کا نازل کیا ہو اہے۔
26:192
نَزَلَ بِهِ الرُّوحُ الْأَمِينُ
جسے روح الامین نے اتارا،
26:193
عَلَىٰ قَلْبِكَ لِتَكُونَ مِنَ الْمُنْذِرِينَ
آپ کے قلب پر تاکہ آپ تنبیہ کرنے والوں میں سے ہو جائیں ،
26:194
بِلِسَانٍ عَرَبِيٍّ مُبِينٍ
صاف عربی زبان میں۔
26:195
وَإِنَّهُ لَفِي زُبُرِ الْأَوَّلِينَ
اور اس (قرآن) کا ذکر (انبیائے) ما سلف کی کتب میں بھی ہے۔
26:196
أَوَلَمْ يَكُنْ لَهُمْ آيَةً أَنْ يَعْلَمَهُ عُلَمَاءُ بَنِي إِسْرَائِيلَ
کیا یہ قرآن ان کے لیے ایک نشانی (معجزہ) نہیں ہے کہ اس بات کو بنی اسرائیل کے علماء جانتے ہیں۔
26:197
وَلَوْ نَزَّلْنَاهُ عَلَىٰ بَعْضِ الْأَعْجَمِينَ
اور اگر ہم اس قرآن کو کسی غیر عربی پر نازل کرتے،
26:198
فَقَرَأَهُ عَلَيْهِمْ مَا كَانُوا بِهِ مُؤْمِنِينَ
اور وہ اسے پڑھ کر انہیں سنا دیتا تب بھی یہ اس پر ایمان نہ لاتے ۔
26:199
كَذَٰلِكَ سَلَكْنَاهُ فِي قُلُوبِ الْمُجْرِمِينَ
اس طرح (کے دلائل دے کر) ہم نے اس قرآن کو ان مجرموں کے دلوں میں سے گزارا ہے۔
26:200
لَا يُؤْمِنُونَ بِهِ حَتَّىٰ يَرَوُا الْعَذَابَ الْأَلِيمَ
پھر بھی وہ اس پر ایمان نہیں لائیں گے جب تک دردناک عذاب دیکھ نہ لیں۔
26:201
فَيَأْتِيَهُمْ بَغْتَةً وَهُمْ لَا يَشْعُرُونَ
پس یہ عذاب ناگہاں اور بے خبری میں ان پر واقع ہو گا۔
26:202
فَيَقُولُوا هَلْ نَحْنُ مُنْظَرُونَ
تو وہ کہیں گے: کیا ہمیں مہلت مل سکے گی؟
26:203
أَفَبِعَذَابِنَا يَسْتَعْجِلُونَ
کیا یہ لوگ ہمارے عذاب کے لیے عجلت کر رہے ہیں؟
26:204
أَفَرَأَيْتَ إِنْ مَتَّعْنَاهُمْ سِنِينَ
یہ تو بتلاؤ کہ اگر ہم انہیں برسوں سامان زندگی دیتے رہیں،
26:205
ثُمَّ جَاءَهُمْ مَا كَانُوا يُوعَدُونَ
پھر ان پر وہ عذاب آ جائے جس کا ان کے ساتھ وعدہ ہوا تھا،
26:206
مَا أَغْنَىٰ عَنْهُمْ مَا كَانُوا يُمَتَّعُونَ
تو وہ (سامان زندگی) ان کے کسی کام نہ آئے گا جو انہیں دیا گیا تھا۔
26:207
وَمَا أَهْلَكْنَا مِنْ قَرْيَةٍ إِلَّا لَهَا مُنْذِرُونَ
اور ہم نے کسی بستی کو ہلاک نہیں کیا مگر یہ کہ اس بستی کو تنبیہ کرنے والے تھے۔
26:208
ذِكْرَىٰ وَمَا كُنَّا ظَالِمِينَ
یاد دہانی کے لیے، اور ہم کبھی بھی ظالم نہ تھے۔
26:209
وَمَا تَنَزَّلَتْ بِهِ الشَّيَاطِينُ
اور اس قرآن کو شیاطین نے نہیں اتارا
26:210
وَمَا يَنْبَغِي لَهُمْ وَمَا يَسْتَطِيعُونَ
اور نہ یہ کام ان سے کوئی مناسبت رکھتا ہے اور نہ ہی وہ استطاعت رکھتے ہیں۔
26:211
إِنَّهُمْ عَنِ السَّمْعِ لَمَعْزُولُونَ
وہ تو یقینا (وحی کے) سننے سے بھی دور رکھے گئے ہیں۔
26:212
فَلَا تَدْعُ مَعَ اللَّهِ إِلَٰهًا آخَرَ فَتَكُونَ مِنَ الْمُعَذَّبِينَ
پس آپ اللہ کے ساتھ کسی اور معبود کو نہ پکاریں ورنہ آپ بھی عذاب پانے والوں میں شامل ہو جائیں گے۔
26:213
وَأَنْذِرْ عَشِيرَتَكَ الْأَقْرَبِينَ
اور اپنے قریب ترین رشتے داروں کو تنبیہ کیجیے۔
26:214
وَاخْفِضْ جَنَاحَكَ لِمَنِ اتَّبَعَكَ مِنَ الْمُؤْمِنِينَ
اور مومنین میں سے جو آپ کی پیروی کریں ان کے ساتھ تواضع سے پیش آئیں۔
26:215
فَإِنْ عَصَوْكَ فَقُلْ إِنِّي بَرِيءٌ مِمَّا تَعْمَلُونَ
اگر وہ آپ کی نافرمانی کریں تو ان سے کہدیجیے کہ میں تمہارے کردار سے بیزار ہوں۔
26:216
وَتَوَكَّلْ عَلَى الْعَزِيزِ الرَّحِيمِ
اور بڑے غالب آنے والے مہربان پر بھروسہ رکھیں۔
26:217
الَّذِي يَرَاكَ حِينَ تَقُومُ
جو آپ کو اس وقت دیکھ رہا ہوتا ہے جب آپ (نماز کے لیے) اٹھتے ہیں۔
26:218
وَتَقَلُّبَكَ فِي السَّاجِدِينَ
اور سجدہ کرنے والوں میں آپ کی نشست و برخاست کو بھی۔
26:219
إِنَّهُ هُوَ السَّمِيعُ الْعَلِيمُ
وہ یقینا بڑا سننے والا، جاننے والا ہے۔
26:220
هَلْ أُنَبِّئُكُمْ عَلَىٰ مَنْ تَنَزَّلُ الشَّيَاطِينُ
کیا میں تمہیں خبر دوں کہ شیاطین کس پر اترتے ہیں؟
26:221
تَنَزَّلُ عَلَىٰ كُلِّ أَفَّاكٍ أَثِيمٍ
ہر جھوٹے بدکار پر اترتے ہیں۔
26:222
يُلْقُونَ السَّمْعَ وَأَكْثَرُهُمْ كَاذِبُونَ
وہ کان لگائے رکھتے ہیں اور ان میں اکثر جھوٹے ہیں۔
26:223
وَالشُّعَرَاءُ يَتَّبِعُهُمُ الْغَاوُونَ
اور شاعروں کی پیروی تو گمراہ لوگ کرتے ہیں۔
26:224
أَلَمْ تَرَ أَنَّهُمْ فِي كُلِّ وَادٍ يَهِيمُونَ
کیا آپ نہیں دیکھتے کہ یہ لوگ ہر وادی میں بھٹکتے پھرتے ہیں۔
26:225
وَأَنَّهُمْ يَقُولُونَ مَا لَا يَفْعَلُونَ
اور جو کہتے ہیں اسے کرتے نہیں۔
26:226
إِلَّا الَّذِينَ آمَنُوا وَعَمِلُوا الصَّالِحَاتِ وَذَكَرُوا اللَّهَ كَثِيرًا وَانْتَصَرُوا مِنْ بَعْدِ مَا ظُلِمُوا ۗ وَسَيَعْلَمُ الَّذِينَ ظَلَمُوا أَيَّ مُنْقَلَبٍ يَنْقَلِبُونَ
سوائے ان لوگوں کے جو ایمان لائے اور نیک عمل بجا لائے اور کثرت سے اللہ کو یاد کریں اور مظلوم واقع ہونے کے بعد انتقام لیں اور ظالموں کو عنقریب معلوم ہو جائے گا کہ وہ کس انجام کو پلٹ کر جائیں گے۔
26:227